عدالت نے سابق وزیراعظم مہندا راجاپاکسے کے ملک سے باہر جانے پر پابندی لگادی

Advertisements
مہندا راجاپاکسے
سری لنکا کی عدالت نے شدید مالی بحران پر پھوٹنے والے پُرتشدد عوامی مظاہروں اور ہنگاموں کے نتیجے میں مستعفی ہونے والے وزیراعظم مہندا راجا پاکسے اور ان کے اتحادی سیاست دانوں کے ملک چھوڑنے پر پابندی عائد کردی۔

سری لنکا کی عدالت نے سابق وزیر اعظم مہندا راجاپاکسے، ان کے بیٹے نمل اور 15 ارکان اسمبلی سمیت قریبی سیاسی اتحادیوں کے ملک چھوڑنے پر پابندی عائد کرتے ہوئے ان کے نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم دیا ہے۔

مقامی عدالت نے یہ حکم ملک بھر حکومت مخالف مظاہرین اور سابق وزیراعظم راجاپاکسے کے حمایتیوں کے درمیان خونی تصادم کے نتیجے میں رکن اسمبلی سمیت درجنوں شہریوں کی ہلاکت سے متعلق ایک مقدمے کی سماعت کے دوران دیا۔

عدالت نے پولیس کو بھی حکم دیا کہ حکومت مخالف مظاہرین پر حملوں کی شفاف تحقیقیات کرے۔ ان پُر تشدد واقعات میں 250 افراد کو شدید زخمی حالت میں اسپتال میں داخل کرنا پڑا تھا جن میں سے درجن سے زائد جان کی بازی ہار گئے تھے۔

واضح رہے کہ سری لنکا میں شدید اقتصادی اور معاشی بحران کے باعث ملک بھر میں ہنگامے پھوٹ پڑے تھے اور شدید عوامی دباؤ کے بعد وزیراعظم مہندا راجا پاکسے نے استعفیٰ دیدیا۔

Whats-App-Image-2020-08-12-at-19-14-00-1-1
upload pictures to the internet