سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے خلاف مقدمہ درج

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان
شہزادہ محمد کی طرف سے ایک اور شخص کو قتل کرنے کے لیے قاتل بھیجنے کا انکشاف منظرعام پر آ گیا ہے۔

میل آن لائن کے مطابق یہ شخص سعد الجبری ہے جو سعودی انٹیلی جنس ایجنسی کا سابق اعلیٰ عہدیدار ہے اور شہزادہ محمد کے برسراقتدار آنے کے بعد سے کینیڈا میں جلا وطنی کی زندگی گزار رہا ہے۔

سعد الجبری شہزادہ محمد کے حریف شہزادے کا قریبی آدمی تھا چنانچہ جب شہزادہ محمد طاقت میں آیا تو سعد الجبری کو جان بچانے کے لیے سعودی عرب سے فرار ہو کر کینیڈا میں پناہ لینی پڑی۔ اب سعد الجبری نے ڈسٹرکٹ کورٹ آف دی ڈسٹرکٹ آف کولمبیا میں ایک مقدمہ دائر کر دیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ جمال خاشقجی کے قتل کے دو ہفتے بعد شہزادہ محمد بن سلمان نے اسے بھی قتل کرنے کے لیے 50قاتلوں پر مشتمل ’ٹائیگر سکواڈ‘ کینیڈا بھیجا تھا تاہم اس ٹائیگراسکواڈ کو کینیڈین بارڈر سیکیورٹی فورسز نے پکڑ لیا۔ ان کے پاس فرانزک ہتھیار تھے جن سے انہوں نے سعد الجبری کو قتل کرنا تھا۔ 

جلاوطن سابق وزیر سعد الجبری نے الزام عائد کیا ہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اسی ٹیم کو اسے مارنے کے لئے بھیجا تھا جس نے جمال خاشوگی کو ہلاک کیا تھا۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ معاملہ شاید مقدمے کی سماعت نہیں دیکھ سکتا ہے لیکن نقصان ہوا ہے۔

Whats-App-Image-2020-08-12-at-19-14-00-1-1
upload pictures to the internet